غالب انسٹی ٹیوٹ کے زیرِ اہتمام سالانہ غالب تقریبات

دسمبر 2015 

غالب انسٹی ٹیوٹ کے زیرِاہتمام سالانہ بین الاقوامی غالب تقریبات۱۱دسمبر تا۱۳دسمبر۲۰۱۵ء میں ایوانِ غالب نئی دہلی میں منعقدہوں گی۔ ان تقریبات میں بین الاقوامی غالب سمینار:’’قرۃ العین حیدرایک منفرد فکشن نگار‘‘ کے موضوع پر منعقد کیاجائے گا۔ سمینارکا افتتاح محترمہ محسنہ قدوائی(ایم پی، راجیہ سبھا )کی افتتاحی تقریر سے ہوگا۔محترمہ محسنہ قدوائیکے ہاتھوں غالب انعامات۲۰۱۵ء کی تقسیم عمل میں آئے گی۔تقریب کی صدارت جسٹس جناب آفتاب عالم صاحب فرمائیں گے۔ سمینارکا کلیدی خطبہ معروف اردو اسکالر پروفیسرگوپی چند نارنگ پیش کریں گے۔اس دفعہ غالب ا نعامات۲۰۱۵ء پروفیسرانیس اشفاق، ڈاکٹر محمد مرسلین، جناب شفیع جاوید،جناب سلطان اختر، جناب اسلم پرویز، پروفیسر ملک زادہ منظوراحمد کو دیے جائیں گے۔یہ انعامات مبلّغ ۷۵ہزار روپے نقد ایک تمغہ اور سند پر مشتمل ہے۔ سمینارکی افتتاحی تقریب میں غالب انسٹی ٹیوٹ کی نئی مطبوعات کا رسمِ اجراء بھی ہوگا۔سمینار کی افتتاحی تقریب کے اختتام پرمشہور و معروف غزل سنگر جناب امریش مشراغالب کی غزلیں پیش کریں گے۔

اس دفعہ سمینار میں شرکت کے لیے ہندوستان کے علاوہ بیرون ممالک کے دانشور حضرات بھی شرکت فرمائیں گے۔ جن مقالہ نگار حضرات کی آمد متوقع ہے ان میں جناب عارف نقوی،جناب فرحت شہزاد، پروفیسر ایلین ڈیسولیئرس، ڈاکٹر یوسف عامر،ڈاکٹر محییٰ عبدالرحمن ، جناب انتظار حسین، ڈاکٹر مرزاحامد بیگ، ڈاکٹر نجیبہ عارف، ڈاکٹر ناصر عباس نیر، پروفیسر عبدالستار دلوی، پروفیسر قاضی افضال احسین، پروفیسر قاضی جمال حسین، پروفیسر طارق چھتاری، پرفیسر صغیر افراہیم، پروفیسر شافع قدوائی، پروفیسر عبدالصمد، پروفیسر حسین الحق،جناب سید محمد اشرف،ڈاکٹر ثروت خان، ڈاکٹر اسلم جمشید پوری، جناب رتن سنگھ،پروفیسر صدیق الرحمن قدوائی،پروفیسر عتیق اللہ، پروفیسر اصغر وجاہت، پروفیسر عبدالبسم اللہ،پروفیسر شمس الحق عثمانی، پروفیسر صادق، پروفیسر وہاج الدین علوی، پروفیسر ارتضیٰ کریم، پروفیسر ابنِ کنول، پروفیسر غضنفرعلی، پروفیسر خواجہ محمد اکرام الدین، پروفیسر معین الدین جینابڈے، جناب مشرف عالم ذوقی، ڈاکٹر خالد علوی، ڈاکٹر خالد جاوید، ڈاکٹر خالد اشرف، ڈاکٹر جمیل اختر، محترمہ ترنم ریاض، ڈاکٹر مشتاق صدف، ڈاکٹر رحمان مصوّر، ڈاکٹر سہیل انور قابلِ ذکر ہیں۔

سمینار کے دوسرے روز یعنی۱۲دسمبر۲۰۱۵ء کوشب میں غالب آڈیٹوریم میں ایک عالمی مشاعرہ کا بھی اہتمام کیاگیاہے جس میں جناب عارف نقوی، جناب فرحت شہزاد،جناب حنیف ترین،جناب سلطان اختر، جناب کشمیری لال ذاکر، محترمہ نصرت مہدی، ڈاکٹر انحم بارہ بنکوی، جناب وجے تیواری، جناب اعجاز پاپولر، پروفیسر فاروق بخشی، جناب خورشید حیدر، جناب مظفر حنفی، جناب گلزار دہلوی،جناب شاہد ماہلی، پروفیسر شہپر رسول، جناب اسرار جامعی، جناب چندربھان خیال، جناب متین امروہوی، جناب فرحت احساس، جناب ماجد دیوبندی، جناب رئیس صدیقی، پروفیسر احمد محفوظ، ڈاکٹر شکیل حسن شمسی،جناب اسد رضا، جناب معین شاداب، جناب ملک زادہ جاوید، جناب شہباز ندیم ضیائی، جناب راشد جمال فاروقی، جناب افضل منگلوری، ڈاکٹر مہتاب حیدر نقوی، ڈاکٹر سراج اجملی، ڈاکٹر راشد انور راشد، جناب حسن کاظمی، جناب خوشبیر سنگھ شاد، جناب فاروق جائیسی اپنا کلام پیش کریں گے۔اس مشاعرہ میں صدر کی حیثیت سے پروفیسر ملک زادہ منظوراحمدموجود رہیں گے۔ اور نظامت کے فرائضجناب معین شاداب انجام دیں گے۔

غالب تقریبات کے اختتام پر۱۳دسمبر کو شام چھ بجے ہم سب ڈرامہ گروپ(غالب انسٹی ٹیوٹ) کی طرف سے اے۔آر۔کاردارکاردار کا تحریر کردہ اُردو ڈرامہ ’’غالب کی واپسی‘‘پیش کیا جائے گا ،جس کی ہدایت کے فرائض عباس حیدر انجام دیں گے۔

امید کی جارہی ہے کہ ہر سال کی طرح اس سال بھی بڑی تعدادمختلف علوم و فنون سے تعلق رکھنے والے حضرات کی بھی شرکت متوقع ہے۔

 

Check Also

یومِ غالب پر بین الاقوامی سمینارکا انعقاد

یوم غالب فروری ٢٠١٤  غالب انسٹی ٹیوٹ کے زیرِ اہتمام ، آغاخان فاؤنڈیشن، انجمن ترقی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے